اعلی حضرت ، مجد دومین وملت امام احمد رضا محدث برکاتی قدس سرہٗ غریبوں کے غم گسار تھے اور حاجب مندوں کے لیے سراپا ہم درد، انھوں نے زندگی بھر دینی معاملات میں مسلمانوں کی حاجت روائی فرمائی ، فتاوے لکھے ، شرعی معاملات میں ہدایات دیں، مسلمانوں کو اسلامی زندگی گزار نے کا سلیقہ بتایا۔ ان کے دل نے چاہا اورادووظائف کا ایک مختصر مجموعہ لکھوں، لکھنا شروع کیا، کچھ ہی لکھا تھا کہ حیات مستعار (زندگی)نے ساتھ چھوڑ دیا، وہ مختصر دعاوں کا مجموعہ مسودے کی شکل میں ان کے صاحبزادۂ والا تبار حجۃ الاسلام حضرت علامہ حامد رضاخان قدس سرہٗ کے ہاتھوں میں آیا، نام رکھا، خطبہ لکھا اور شائع کر دیا، تاکہ مسلمانوں کو نفع ہو،اس مختصر رسالے کا تاریخی نام ہے:’’الوظيفة الكريمة ‘‘( ۱۳۳۸ھ ) جو شہزادہ اعلی حضرت ، تاجدار اہل سنت حضور مفتی اعظم مصطفیٰ رضا قادری برکاتی قدس سرہٗ کے ایک مختصر اور مفید ضمیمے کے ساتھ افادۂ عامۃ المسلمین کے لیے پیش خدمت ہے۔

اس مجموعے کی خصوصیت یہ ہے کہ اکثر دعائیں اور اور اد مختصر ہیں تاکہ عام مسلمان بھائیوں کو ان کا پڑھنا اور یا در رکھنا آسان ہو۔ امید کہ برادران اسلام اس سے استفادے اور افادے کی سبیل نکالیں گے میں دوسروں تک بھی پہنچائیں گے ، اور ثواب کے مستحق ہوں گے ۔

Menu